ہاٹ سیکس سٹوریز کنواری لڑکی

Hot Sex Stories jawani lun ko tarsti rahae

آپ لوگوں نے گرم لڑکی تو سن رکھی ہو گی  لیکن ٹھنڈی لڑکی کا نام بہت کم سنا ہو گا مٰں کبھی ٹھنڈی لڑکی ہوا کرتی تھی تب میں نئی نئی جوان ہوئی تھی اور میری ماں ہر وقت مجھے روکتی ٹوکتی تھی سیکس کے قریب بھی نہیں آنے دیتی تھی اور اس نے ہر وقت میری نگرانی کرنا ہوتی تھی اس کو ہر وقت میری کنواری چوت پھٹ جانے کا ڈر لگا رہتا تھا

حالانکہ اس دور میں ٹھنڈی لڑکی ہوا کرتی تھی اور سیکس کی الف ب سے بھی واقف نہیں ہوا کرتی تھی  لیکن پھر بھی نا جانے کیوں میری ماں کو میری چوت کی فکر ریشان کیئے رکھتی تھی  میری پوری کوشش ہوتی کہ محلے کے چالو تائپ آوارہ قسم کی لڑکی سے دوستی نا کروں لیکن میں اتنی معصوم اور تھنڈی لڑکی ہوا کرتی تھی کہ مجھے دوسروں کا اندازہ نہیں ہوتا تھا ایک بار مجھے یاد ہے کہ میں   نے محلے مٰں نئے آنے والے ہمسائے کی لڑکی سے دوستی کر لی تھی

تب گھر آئی تو اماں نے مجھے بالوں سے پکڑ لیا اور منہ پہ تین چار تھپڑ لگا دیئے اور کہنے لگی کتی کمینی اب تو مجھ سے پوچھے بنا ہی دوسروں کے گھر جانے لگی ہے اور میں روتی رہی بھلا اس میں حرج ہی کییا تھا تب کی بات ہے جب میں مڈل حصہ کی سٹوڈنٹ ہوا کرتی تھی اور پھ دھیرے دھیرے مجھے سمجھ آنے لگی تھی لیکن پوری اب بھی نہیں آئی تھی

جب میں میٹرک میں گئی تو وہاں اک نئی لڑکی نے داخلہ لیا تھا جئو کسی شہر کی رہنے والی تھی اور ماڈرن بھی تھی اس کے ابو کا تبادلہ ادھر ہوا تھا وہ اس لیئے ساتھ آئی تھی اس نے مجھے بتایا تھا کہ میری چھاتی کا سائز کیا ہے کتنا ہونا چاہیئے اور یہ بھی بتایا تھا کہ اس کی چھاتی اس لیئے جلد بڑی ہوئی ہے کیونکہ اس کو اس کا کزن چوستا ہے ممے چسوانے سے ممے بڑے ہوتے ہیں

تب میرا بھی پہلی بار دل کیا کہ کوئی میرے ممے چوسے اور مجھے ٹھنڈی لڑکی سے گرم لڑکی بنا دے اب میری چوت ترستی چوت تھی جس کو لن ینے کا شوق چڑھنے لگا تھا اور اب میں نے چوت کو دیئکھنا بھی شروع کر دیا تھا جب نہاتی تو  چوت کے اوپر اچھی طرح صابن لگاتی تو مزہ ملتا تھا

پھر وقت گزرتا رہا اور میں اس طرح کالج میں پہنچ گئی اور ایک دن میری امی فوت ہو گئی اور اب مجھے کوئی روکنے والا بھی نہیں تھا ل؛یکن مجھے سسپنس ہونے لگا تھا کہ دیسی سیکس اور وائلڈ سیکس اور بولڈ سیکس ان میں کیا کیا فرق ہوتے ہیں  میرا دھیان ا س جانب ہو چکا تھا

ہائے دوستوںمیرا نام ماروی ہے میں بیس  سال کی  جوان لڑکی ہوں اب ٹھنڈی کی بجائے گرم لڑکی ہوں مجھے بھی لن ننگا دیکھنا پسند ہےہوں میں ایک کالج میں پڑھتی ہوں میں نے دیسی سیکس نام کے بارے میں بہت سنا ہے مگر مجھے اس کا دیسی سیکس بھی نہیں پتا میں چاہتی ہوں کہ مجھے اس کے بارے میں پتا چلے

مگر میں گھر میں تو کسی سے نہیں پوچھ سکتی نہ مگر میں اس کے بارے میں جانے کے لئے بہت زیادہ کوشش کرتی ہوں مگر پتا نہیں چل سکا میں نے کلاس میں اپنی دوستوں سے بھی پوچھا ہے مگر میری دوستوں نے مجھے بد تمیز کہا اور مجھ سے لڑائی بھی کی اور مجھ سے بات چیت کرنا بھی بند کردی

مگر میں پھر بھی میں باز نہیں آئی تھی اور ایک دن جب میں اپنی ایک کلاس بنک کرکے باہر گارڈن میں بیٹھی تھی کہ وہاں ایک لڑکی آکر بیٹھی اور مجھ سے باتیں کرنا شروع کردی وہ دوسرے ڈیپارٹ کی تھی اسکا نام ثانیہ تھا میں نے اس دیسی سیکس والی لڑکی کو پہلے بھی دیکھ رکھا تھا اور اس کے بارے میں کافی سن رکھا تھا کہ اس کے بہت سارے افیئرز ہیں

اور وہ کافی آوارہ ٹائپ کی لگتی تھی کپڑے بھی اتنے واہیات پہن کر آتی تھی کے بس پھر اس سے میری دوستی ہوگئی میں نے اس سے ایک دن کہہ ہی دیا کہ کیا تم مجھے بتا سکتی ہو کہ سیکس کس طرح ہوتا ہے میں جاننا چاہتی ہوں اس نے کہا کہ بس اتنی سی بات کل مجھے کالج کے اسٹور روم کے پاس ملنا میں وہاں اپنے ایک فرینڈ کو لے کر آؤں گی

میں بہت خوش ہوگئی کہ چلو اب مجھے اس بارے میں کچھ تو پتا چلے گا اگلے دن میں ٹھیک ٹائم پر پہنچ گئی اور اسٹور روم کے گیٹ کے پاس کھڑی ہو گئی مگر وہاں تالا لگا تھا مجھے غصّہ آیا کہ شاید مجھے اس نے الو بنایا ہے میں واپس جانے لگی اور پھر میں نے اپنی کلاس کے ایک دیسی سیکس والے لڑکے کے ساتھ ثانیہ کو آتے ہوئےدیکھا

میں ایک سائیڈ پر چھپ گئی ثانیہ نے اسٹور روم کا دروازہ کھولا اور اس دیسی سیکس والے لڑکے کے ساتھ اندر جاتے ہوئے مجھے آنکھ مار کر دروازہ بند کر لیا اور پھر میں کھڑکی کے پاس چلی گئی اور اندر دیکھنا شروع کر دیا میں نے اندر دیکھا کہ وہ دونوں دیسی سیکس والی کِس کر رہے تھے

اور پھر انہوں نے ایک دوسرے کے کپڑے اتارے مجھ سے تو یہ سب دیکھا نہیں جارہا تھا مگر میں پھر بھی وہاں کھڑی ہوئی تھی پھر وہ دونوں سیکس کرنے لگے ا، مجھے اتنی شرم آرہی تھی کہ بس نا، مگر میں پھر ڈھیٹ بن کر وہیں کھڑی ہوئی تھی میرے سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ میں کیا کروں میں چا ہتی تھی کہ میں یہاں سے چلی جاؤں  میں نے محسوس کیا کہ میری چوت میں پانی آگیا ہے

مگر دل کہہ رہا تھا کہ پورا دیکھ کر ہی جاؤں گی اور پھر میں پورا دیکھ کر ہٹ گئی اور اگلے دن جب میں ثانیہ سے ملی تو اس دیسی سیکس والے نے مجھ سے کہا اب خوش ہو تم میں نے کہا ہاں مگر میں نے پھر دوبارہ اس دیسی سیکس والی لڑکی سے بات کرنا بند کر دیا ۔ کیونکہ مجھ سے برداشت نہٰں ہوتا اور میں اپنی چوت کنواری شوہر سے کھلوانا چاہتی ہوں۔

Hot Sex Stories kanwari choot phir open hoe

 

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top