پاکستانی سیکس سٹوریز کنواری چدائی

(pakistani sex stories kanwari chudai)

Pakistani Sex Stories pahli chudai buhat dard hoe

میں سیکسی اور گرم لڑکی ہوں گرم لڑکی اس لیئے لکھ رہی ہوں تاکہ آپ کو میری جلد سمجھ آ سکے اور میری جوان خوار چوت ہے مجھے جوان ہوئے کئی سال ہو چکے تھے اور میں اپنی چوت میں لن لینے کو ترس چکی تھی اور مجھے سمجھ نہیں آ رہی تھی  کہ اب کیا کروں

میں نے اب محلے کے لڑکوں میں دلچسپی لینا شروع کر دی تھی اور میرا خیال تھا کہ کوئی اچھا لڑکا دیکھ کے اس کو چوت پیش کرونگی ایک تو مجھے ڈر بھی بہت لگتا تھا کہ سن رکھا تھا کہ کنواری چوت کی پہلی چدائی  میں بہت درد ہوتی ہے اس لیئے مجھے اندر سے ڈر بھی لگتا تھا

میں اس وقت بڑے لن کی بجائے چھوٹے لن والے ٹین ایج لڑکے کی تلاش مٰں تھی تاکہ وہ مجھے چودے اور کسی کو علم بھی نا ہو سکے ہمارے سامنے والے گھر مٰں ایک لڑکا رہتا تھا اس پہ مٰں نے لائن مارنی شروع کر دی تھی اور اس کو پتانے میں کامیاب ہو چکی تھی

لیکن اس کو ابھی کود چودنے کا علم نہیں تھا نا اس نے کسی کی پہلے چدائی لگائی ہوئی تھی  ایک دن میں گھر اکیلی تھی اس کو گلی والی سائیڈ پہ بنے ڈرائینگ روم مٰں بلوا لیا اس وقت گلی میں کوئی بھی نہیں تھا اور میں اس کے ساتھ لپٹ گئی اور مجھے مست مزہ ملنے لگا تھا اور اب مٰں کود سے پہل بھی نہٰں کر سکتی تھی کیونکہ میں نے کبھی اس طرح بولڈ ہو کے سیکس نہیں کرایا تھا

اوپر سے لڑکا بھی اناڑی تھا میں اس کے ہونٹ چوستی رہی اور وہ میرے ہونٹ ہی چوستا رہا میری کنواری چوت  گیلی ہوتی رہی  لیکن اس نے مزیدکچھ نا کی دس منٹ اس طرح ہی گزر گئے تھے اور اوپر سے میری امی آگئی میں نے جلدی سے اس لڑکے کو گلی والی سائیڈ سے باہر نکال دیا

لیکن کسی طرح میری امی کو شک پڑ گیا تھااور انہوں نے مجھے محسوس نا کرایا پھر ایک دن میں نے چوری سنا کہ وہ ابا سے کہہ رہی تھی کہ اب بیٹی بڑی ہو گئی ہے وقت اچھا نہیں ہے مجھے اس کی فکر ہے جلد اس کی شادی کر دی جائے تو انہوں نے اس پہ  غور کیا

اور پھر انہوں نے ایک برادری کا اچھا لڑکا دیکھ کے میری شادی کر دی جائے تو اچھا رہے گا میں سمجھ گئی کہ امی کو شک ہو گیا ہے اور اب میں احتیاط میں  رہنے لگی تھی  کہیں رنگے ہاتھوں  نا پکڑی جاوں  اور مسئلہ خراب نا ہو جائے اب  کچھ  دنوں کے بعد میری منگنی ہو چکی تھی  اور اب مجھے منگیتر سے چدائی لگوانی تھی  اور میری چوت کی خارش کافی حد تک بڑھ چکی تھی

میری سیکس کہانی  دوستوں میرا نام نرگس ہے  میں چوبیس سال کی ہوں  میری منگنی ہوئی ہے میری پسند سے وہ لڑکا مجھے اور میں اسے بہت پسند کرتے تھے  لیکن ہم دونوں نے کبھی بھی ایک دوسرے کو چاہا نہیں تھا  لیکن جب میری منگنی ہوئی اور میں نے اس سے بات کرنا اسٹارٹ کیا تو مجھے پتا نہیں کیا ہوتا تھا  میرا دل چاہتا تھا کہ جلد سے جلد میری اس سے شادی ہو جائے

اور ہم دونوں ایک ہو جائیں  ہم روز صبح شام ایک دوسرے سے بات کرتے تھے  جب تک میری اس سے بات نہیں ہوتی تھی مجھے چین نہیں آتا تھا  ایک بار ہم دونوں فون پر بات کر رہے تھے  کہ اچانک مجھے پتا نہیں کیا ہوا میں نے اس سے کہا مجھے تم سے اکیلے میں ملنا ہے

تم مجھ سے ملو  وہ کہنے لگا کیوں ملنا ہے  میں نے اسکو بتایا کہ مجھے بہت شدّت سے انتظار ہے ہماری شادی کا میری شادی میں ٢ سال تھے میں اتنا صبر نہیں کر سکتی تھی  میری بہت ضد کرنے کے بعد وہ مان گیا اور ہوٹل میں ایک کمرہ بک کروایا  میں بہت خوش تھی کہ میں جو چاہتی تھی وہ اب ہوگا

دوسرے دن میں بہت تیار ہو کر اس سے ملنے گئی  وہ مجھے پک کرنے آیا ہوا تھا  میں اس کے ساتھ ہوٹل چلی گئی  وہاں مجھے اسکو اپنے ساتھ اکیلا پاکر بہت خوشی ہوئی  میں اس کے گلے لگ گئی  اور زور سے چپکنے لگی مجھے نہیں پتا تھا کہ میں یہ کیا کر رہی ہوں  پھر ہم دونوں گلے لگے لگے اچانک بیڈ پر لیٹ گئے میرا دل نہیں کر رہا تھا اسکو چھوڑنے کا میں اس کے گلے لگی رہی  وہ میرے اوپر لیٹ گیا

اور میرے ممے زور زور سے دبانے لگا مجھے بہت مزہ آرہا تھا  میرا دل نہیں کر رہا تھا کہ میں اس کے پاس سے دور ہوں  میں نے اس کے اور اپنے کپڑے اتار دیئے  وہ میرے ممے منہ میں لے کر چوسنے لگا  میرا منگیتر بہت پیارا تھا  اففف مجھے پتا نہیں کیا ہو رہا تھا  بہت پسینے آرہے تھے

وہ میرا جسم چومنے لگا  میری پوری جوانی اس نے چوم لی تھی  میں بہت مدہوش ہوئی تھی  پھر وہ نیچے کی طرف بڑھا وہ اپنے ہاتھ سے میری پھدی سہلانے لگا  پھر اس نے اپنا لنڈ نکال کر میرے ہاتھ میں دے دیا میں نے بھی اسکا لنڈ سہلایا  پھر اس نے میری ٹانگیں کھول کر میری چوت میں اپنا لنڈ ڈال دیا  اف اس نے تو لحاط ہی نہیں کیا تھااور فل زور سے دھکا مار کے دال دیا تھا میری چوت کون چھورنے لگی اور درد سے برا حال تھااور زور زور سے جھٹکے مارنے لگا

مجھے بہت درد ہو رہا تھا  وہ اندر باہر کرتا رہا  اور مجھے جھٹکے دیتا رہا میں اس کے ہونٹ چومتی رہی مجھے اس پر بہت پیار آرہا تھا  میں بہت خوش ہو رہی تھی جب ہم دونوں فارغ ہو گئے تو میں نے اس کے ساتھ باتھ لیا  ہمیں نہانے میں بھی بہت مزہ آیا

اور پھر ہم نے کافی پی  اور وہاں سے چل دیئے اس نے مجھے میرے گھر ڈراپ کر دیا  دوستوں یہ میری سیکسی کہانی تھی میرے اور میرے منگیتر کی  اب میں اس کے ساتھ ہی ہوں میری شادی ہو گئی اور ہم بہت اچھی زندگی گزار رہے ہیں اور میرے دوبچے بھی ہیں میری سیکس کہانی یہاں پر ختم ہوئی اور اب میری چوت  کھل چکی ہے مجھے بہت مزہ ملتا ہے۔

Pakistani Sex Stories mae kanwari choot khul gai

 

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top