سیکس سٹوری کنواری لڑکی کی گانڈ ماری رو پڑی

(sex-story-kanwari-larki-ke-gand-mari-roo-pari)

sex story mae jab kanvari gand chodnae ko mili uffkia batauo

دوستوں میں سیکس کا ہنگری نوجوان ٹین ایج لڑکا ہوں میں آج اپ کو ایک  ابھری سیکسی گانڈ کی  چدائی  کی کہانی سنا نا چاہتا ہوں میرا نام عدیل ہےمیں پڑھتا ہوں اور ساتھ میں جاب بھی کرتا ہوں

  میں گلشن میں رہتا ہوںہم دو  بہن بھائی ہیں  اور ہمارا ایک دوسرے سے بہت پیار ہے بہن سے وہ والا پیار نہٰں ہے جو آپ سمجھ رہے ہیں صرف بہن والا پیار ہے میں نے کبھی

اس کو سیکس کی نظر سے نہٰں دیکھا کیونکہ مجھے اور کئی لڑکیاں بھی میسر ہیں جن کو چود سکتا ہوں میرا اس لیئے بھی دل بھرا ہوا ہے اور میں ان دنوں کسی لڑکی کی گانڈ چودنے کے چکر میں تھااور پھر مجھے کسی نا کسی طرح چودنے کا موقع مل ہی گیا یہ ایک شاندار سیکس کہانی ہے آپ اس کو پڑھ کے انجوائے کرینگے

بہن شادی شدہ ہے اور میں ابھی تک اکیلا ہوں اور میرے ابو پاکستان سے باہر ہےمیں امی یہاں ہیں اور بہن بھی کاغان میں رہتی ہے  اس کا گھر بہت پیاری خوبصورت جگہ پہ ہے

ہم پہاڑی قسم کے لوگ ہیں اگرچہ روائتی پٹھان نہیں ہیں جن کے بارے مشہور ہوتا ہے کہ ان کو پھدی سے زیادی گانڈ چودنا زیادہ اچھا لگتا ہے جن کے بارے میں لطیفے مشہور ہیں

کہ پٹھان جب کسی لڑکی کو دیکھتا ہے تو وہ یہ نہیں کہتا کہ کای سیکسی خوبصورت لڑکی ہے وہ اس کو دیکھ کے کہتا ہے واہ اوئے یہ اتنا خوبصورت لڑکی ہے تو اس کا بھائی کتنا خوبصورت ہوگا کیونکہ ان کو بہن کی بجائے اس کے بھائی کی گانڈ سے زیادہ دلچسپی ہوتی ہے

میں ہمیشہ اپنے امتحان کے بعد اپنی بہن کے گھر جاتا ہوں اپنی چھٹیاں گزارنے اور میں اپنی چھٹیاں پوری کر کے گھوم  کے آجاتا ہوں  مجھے وہاں جا کے سکون ملتا ہے

اور کئی بار وہاں چدائی کا بھی موقع بھی مل جاتا ہے  میں ابھی جب گیا تھا تو میں اپنے ماموں کے گھر بھی گیا تھا  وہاں میرے ماموں بھی رہتے ہیں اور ان کی سیکسی لڑکیاں میری کزن بھی ہیں لیکن کبھی مجھے کسی کزن کو چودنے کا اتفاق نہیں ہوا

اور میں جب اپنے ماموں کے گھر رکا تھا تو ان کے گھر کے سامنے ایک گھر تھا جہاں میں نے ایک  ابھری ابھری گانڈ والی لڑکی کو دیکھا تھاوہ موٹی گانڈ کی لڑکی بہت ہی خوبصورت تھی

اور وہ اپنی چھت پر کھڑی تھی اور اس کے بال براؤن رنگ کے تھے  سیب کی طرح سرخ و سفید گال تھے اس کے جیسے پہاڑی لڑکیاں ہوتی ہیں بالکل کچی گری تھی وہ اور اس کی گاند دیکھ کے میرا لن کھڑا ہو گیااور میں نے ارادہ بنا لیا کہ کسی نا کسی طرح لازمی اس کی گانڈ انجوائے کرونگا

آنکھیں گرین رنگ کی اور گورا رنگ۔میں تو اس کو دیکھ کر حیران تھا اور میں نے سوچ لیا تھاکہ میں اس سے دوستی کروں گا۔اور وہ خود مجھے لائن دے رہی تھی

 میں نے اس کی جانب کاغذ کا رقعہ پتھر کے ساتھ باندھ کے پھینکااور اس پہ لکھا مجھے تم اچھی لگی ہو اگر دوستی کا موڈ ہے تو اپنا فون نمبر واپس اسی طرح لکھ کے بھیج دو اور ا سنے واپس ا سی طرح لکھ کے بھیج دیامیں نے اس سے اس کا نمبر مانگا  تھااور اس نے دے دیا تھا اور اس نے اپنا نمبر مجھے دے دیا  اور ساتھ ہی فلائنگ کس میں نے اس کی جانب بھیجی

اور میں  سونے چلا گیا اور اس کو چودنے کا پروگرام بنانے لگا کہ کیسے ا سکی گانڈ چودوں   میں نے اس کو ملنے بلایا اور وہ آگئی پہلے ہم ایک وادی میں ملےاس کے بعد وہ مجھے اپنی بہن کے گھر لے گئی

اس کی بہن اس کی اچھی دوست بھی تھی وہاں ہم نے بہت ساری باتیں کیں اور اس کی بہن کو بھی میں نے بعد میں چودنے کا پروگرام بنایاا سکی الگ کہانی ہے جو بعد میں شیئر کرونگا

میں نے اس کی بہن کو جب اس وقت پٹا لیا تو اس کو کہا کہ اگر وہ مجھے اپنی بہن کے ساتھ چدائی کا موقع دے تو پھر بعد میں اس کو بھی چودوں گاا ور اس طرح اس کی بہن بھی کسی کو اس کی چدائی کا نہیں بتائے گی

کیونکہ وہ پہلے ہی میں چود چکا ہونگا اس کو میرا آئیڈیا اچھا لگااور ا سنے ہم کو الگ کمرہ دے دیا  میں اس  ابھری گانڈ والی کے پاس گیااور  میرے قریب آئی اور مجھے کِس کرنے لگ تو

ایک دم حیران تھا کہ یہ ہو کیا رہا ہےخیر  اس نے مجھے کِس کی اور  میں نے اس کو کِس کیاور ہم نے سیکس کا آغاز کر دیا اور اس کے نرم نرم ہونٹوں کو اپنے ہونٹوں سے چوسنا شروع کیا اور بہت دیر تک چوستا رہامجھے بہت مزہ آرہا تھا

میں نے اس  ابھری گانڈ والی کے گلے پر خوب کِس کی اور  اس کی قمیض میں اپنا ہاتھ ڈالا اور اس کے  مست مست مموں پر اپنا ہاتھ پھیرنے لگا اور  میں نے اس کی قمیض اتار دی

اور اس کے بوب کو چوسنا شروع کیا اور  میں نے اسکی شلوار اتاری میں نے  اس کو الٹا کیا  اور کہا مجھے تمہاری گانڈ میں لن ڈال کے چدائی شروع کرنی ہے وہ نا مانی پھر میں نے منت سماجت کر کے منا لیا اور اس کی پیچھے گانڈ میں اپنا لنڈ ڈالا اور وہ گانڈ والی زور سے چیخیبولی اوئی ماں مر گئی ہائے آپی میری پھٹ گئی

اور اس طرح میں اسی جوانی کو چودتا رہا اور اسکے جسم کو لوٹ کر اسکے چوت میں لنڈ دیئے اسکو دیر تک اسکا مزہ لے کر اسکو اپنا بنائے اسکی چدائی لگاتا رہا تھا

میں اسے کوئی آدھا گھنٹہ پچیس منٹ  تک  گانڈ میں  اندر باہرکرتا رہااور  میری مٹھ نکلنا شروع ہو گئی اور میں نے اپنے کپڑے پہنےاور میں وہاں سے چلا گیا جانے سے پہلے ا سکی بہن کو کہا

کل تم کو چودنے آونگا اور میں جب بھی وہاں جاتا ہوں میں اس گانڈ والی سے ضرور ملتا ہوں کیوں کہ مجھے عادت ہو گئی ہے اس کی گانڈ مارنے کی اور اگلے دن اس کی بہن کی پھدی لیتا ہوں  یہ تھی میری چکنی جوان مست لڑکی اور اسکی خوار گانڈ والی کی کہانی چدائی کی

sex story mae javani bae kabo hoo chuki thi kia karta

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top