بہن کی سہیلی کی باتھ روم میں ننگھی چدائی

میرا نام علی ہے میں کراچی میں رہتا ہوں اور مجھے چدائی لگانے اور سکس کرنے کا ہت شوق ہے میری عمر 20 سال ہے. ایک دن میرے گھر میری بہن کی دوست آ گئی. وہ بہت خوبصورت تھی اسکا نام حفصہ تھا اور اسکی جوانی تو بہت لش تھی بڑے بڑے ممے چکنا جوان جسم مست چکنی موٹی گانڈ اور اسکی ادائیں تو سب کو مار ڈالتی تھیں میں اسکو دیکھ کر فل مست ہو جاتا تھا. گرمی کا موسم تھا ، وہ کچھ دنوں کے لیئے ہمارے گھر رکنے آئی ہوئی تھی اور ایک دن باتھ روم میں نہا رہی تھی تو میں بہن کے کمرے میں پن لینے گیا اور اسکے باتھ روم کے سامنے سے گزرا . دروازہ کھل ہوا تھا شائید وہ بند کرنا بھول گئی تھی اور میری نظر اس پر پڑھ گئی. میں نے پیچھے مڑ  کر دروازے کو تھوڑا سا اور کھول لیا . اب میں اس کو صاف دیکھ رہا تھا اسکا گھیلا زبردست فل ننگھا جسم دیکھ کر میرے ہوش اڑھ گئے اور میں اسکو دیکھتا ہی رہ گیا میرا دل کر رہا تھا کہ اسکو لپک جاو اور آض تو ریپ کر دو اسکا۔

اس نے نہاتے ہوئے گھوم کر اپنا جسم دھونے کے لیئے گھمایا تو مجھے دیکھ لیا . میں دڑ گیا تھا پتہ نہیں اب کیا ہو گا . لیکن  اس نے مجھے اشارہ کیا کہ اندر آ جاؤ میں حیران ہوا کہ یہ کیا کہہ رہی ہے اور ویسے بھی وہ لگ رہا تھا کہ سکس کر رہی ہے اور مجھ پر کافی لائن مارتی تھی خیر میں نے ادھر ادھر دیکھ توہاد آیا کہ گھر میں بہن نہیں ہے اور وہ دیر سے آئے گی پھر میں اندر چلا گیا . میں نے دروازہ بند کر دیا اور میں نے بھی جاتے ہی اپنے کپڑے اتار دیئے.میں نے سب سے پہلے اس ممے دبا کر اسکو لپٹا اور اسکی  جوانی کو کس کرتا ہوا اسکے مموں کو منہ میں ڈال کر چوسنا شروع کر دیا. وہ بہت گرم اور گھیلے جسم میں ایک بلا لگ رہی تھی اور میر ا لنڈ ٹائٹ ہو گیا تھا۔ اسنے میرے لنڈ کو اپنے ہاتھوں سے پکڑ کر رگڑنا شروع کر دیا اور میں اسکے پورے ننگھے گھیلے جسم کو سہلانے پھیرنے لگ گیا۔

اس کو مزہ آیا اور فل گرم ہو گئی تھی اور کہا کہ کسی کو نہیں بتانا اور جلدی کرو تم، میں نے اسکو زمین پر لٹیا اور پھر اس نے میرا لن اپنے منہ میں ڈال لیا اور وہ میرے لن کو منہ میں چوستی رہی . میں نے ساتھ میں  اس کی پھدی میں اپنی انگلی بھی ماری. اس کو مستی چھا گئی تھی. میں نے جب اس کی پھدی میں انگلی ڈالی تو مجھے پتا چلا کہ یہ تو پہلی بار سکس کروا رہی ہے . وہ مجھے کہنے لگی کہ اندر نہیں کرنا درد ہو گا میں نے کہا کچھ بھی نہیں ہو گا. اور ویسے بھی میں مٹھ مار مار کر اسکا فل خوار ہو گیا تھا اسلیئے وہ منا بھی کرتی تو بھی آج میں اسکی چوت مار ہی دیتا پھر میں نے اسکو اور خورا کیا اور اسکی جوانی کو اپنی زبان سے چاٹنے لگ گیا-

میں نے جب دیکھا کہ اب وہ فل گرم ہو گئی ہے تو میں نے اس کو ایک دیوار کے ساتھ کھڑا کیا . پھر میں نے اس کی ایک ٹانگ اٹھا کر اوپر کی تو وہ پھر کہنے لگی اندر مت کرنا میں نے پھر کہا ٹھیک ہے . میں نے جب ٹانگ اٹھا لی اور اپنا لن اس کی چکنی پھدی پر رکھا اور ایک جھٹکا دیا تو میرا لن تھوڑا سا اندر چلا گیا . میں نے پھر اندر باہر کیا . میں نے پھر ایک اور جھٹکا دیا تو اس کی پھدی کے اندر جو پردہ تھا وہ پٹ گیا اور اس کی پھدی سے خوں انے لگ گیا. وہ پریشان ہو گئی اور درد سے سسکیاں لے رہی تھیں میںuفل خوار اور ٹھرکی ہو گیا تھا اسلیئے اسکا کوئی لحاظ نہ کیا۔ میں نے کہا کچھ نہیں ہوتا میں نے اس کو پھر خوب جھٹکے دیئے .اتنی دیر میں وہ فارغ ہو گئی اور اسکا پانی تیز تیز بہہ رہا تھا۔ لیکن میں ابھی فارغ نہیں تھا ہوا . میں نے اس کو کرتا رہا جب وہ دوبارہ فارغ ہوئی تو میں بھی فارغ ہو گیا . جب میں نے اپنا لن اس کی پھدی سے نکالا تو وہ کہتی تھی اور کرو-

میں نے اسکو کہا کہ آج رات آجانا میرے کمرے میں وہیں کرین گے تم فکر نہ کرو اسکے بعد وہ کوئی 2 ہفتے رکی اور میں نے اسکی روزانہ نئے انداز سے اسکی چوت ماری اور اسکو کتے کی طرح چودتا تو وہ خوش ہوتی اور مہنس ہنس کر فل ٹھرکیوں کی طرح میری گود میں بیٹھ کر چھلانگیں بھی مارتی۔ میں نے اسکی چوت کو چاٹا چوسا اور اسکو پھر جب موقع ملتا میں اسکو فون کرتا اور اسر اپنی ٹھرک مٹاتا۔

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top