دکان دار لڑکی کی چوت ماری

یہ ان دنوں کی بات ہے جب میں نے نیا نیا باڈی بلڈنگ کلب جوائن کیا تھا اور میری صحت بھی کافی زیادہ اچھی ہو رہی تھی۔ میرے مسل بھی بن رہے تھے اور میں ایک زبردست بڈی والے بھاری بھرکم لڑکا بن رہا تھا۔ میں پیدل گھر سے جاتا تھا اور پیدل واپس آتا تھا۔ میں ایک مارکیٹ سے گزرتا تھا اور وہاں پر زیادہ تر عورتیں نوکری کرتیں تھیں۔ خیر ایک دفعہ میں گھر آرہا تھا تو مرکیٹ سے گزرتے وقت مجھے یاد آیا کہ مجھے کچھ کپڑے لینے ہیں اپنی بہن کے لیئے۔ میں ایک دکان پر گیا وہاں ایک لڑخی جوکہ اتنی کاص نہیں تھی بیٹھی تھی۔ میں نے اسکو اپنی بہن کے لیئے کپڑے نکالنے کو کہا اور اسنے ہر طرح کے کپڑے دکھائے۔ وہ جب کپڑا نکل کر بچھاتی تو اسکی جوانی کی چھاتی لٹک کر اسکے کھلے لے سے نظر آتی اور میری نظر اسپر پڑھتی۔

اسکی اسطرح کی حرکت نے مجھے خوار کرنا شروع کردیا تھا اور میرا لنڈ بھی پینٹ میں ٹائٹ ہونے لگ گیا تھا، میں نے ایک جوڑا پسند کیا اور اسکو پیسے دینے کو دوران اسکے ہاتھ کو سہلایا۔ اسنے پہلے برا مانا اور پھر باقی پیسے مجھے دیتے وقت مجھے اپنے ہاتھ سے دیتے ہوئے میرے ہاتھ کو سہلانے لگی، میں نے اسکو کہا کہ اب نمبر بھی دے دو نہ یہ بتاو یہاں کوئی جگہ ہو تو۔ اسنے کہا کہ اوپر چلیں وہاں باتھ روم کی طرف بات کرتے ہیں۔ میں اسکے ساتھ اوپر گیا اور اس نے کہا کہ دستی کرنی ہے تو بولو۔ میں اسکی چوت مارنے کے چکر میں تھا اور ویسے بھی جب سے باڈی بنا رہا ہوں مٹھ بھی نہیں ماری تھی میں نے۔ میں نے اسکو اپنی باہوں میں دبایا اور اسکے ہونٹوں کو چوسنے لگا۔

3 منٹ تک کرنے کے بعد میں نے اسکو کہا کہ اندر چلو اور اسکو اندر لے جاتے ہی اسکی لوار کو چھٹکے سے اتار کر اسکی چوت کو اپنے ہاتھوں سے سہلانے لگا، وہ ایک دم مست ہو کر سکسی درد والی آوازیں نکالنے لگی اور میرا لںڈ فل ٹائٹ ہوگیا تھا۔ میں نے اسکی ایک ٹاگ کو اوپر کرکے اپنا لنڈ باہر نکالا اور اسکی چوت میں گھسا کر اسکی تیز تیز پھدی مارنے لگا، پہلے مجھے مزہ آیا مگر پھر اسکی کھلی چوت تھی تو اسکو گھوڑی بنا کر اسکی پھدی مارنے لگا-  پھر اسکی کمیز کو اوپر کرکے اسکے ممے دبانے اور سہلانے لگا جس سے وہ اور گرم ہوگئی اور میں اپنی ٹھرک مٹانے کے لیئے اسکی نان سٹاپ پھدی مار رہا تھا کہ اسکی چوت میں ہی 2 منٹ کے اندر فارغ ہوگیا اور میری بہت زیادہ مٹھ نکلی جوکہ لنڈ باہر نکالنے کے ساتھ باہر بھی بہنے لگی، اسنے کہا کہ میں ٹیبلٹ لوں گی تو کچھ نہیں ہو گا آ جاو اب آپ کے ساتھ مزہ آیا روز دیکھتی تھی آج کر بھی لیا، پھر اسنے مجھے اپنا کارڈ دیا اورمیں گھر چلا گیا۔

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top