پاکستانی سیکس سٹوریز میں مستی والی یاد گار چدائی

(pakistani sex stories mae masti wali yaad gaar chudai)

Pakistani Sex Stories chudai ki buhat hot story

آج جو کہانی میں آپکو سنانے جارہا ہوں وہ حقیقت پر مبنی ہے میرا نام سلمان ہے میری عمر تئیس  سال ہے میں بی اے کا اسٹوڈنٹ ہوں ویسے تو میری بہت ساری کزنز ہیں. جو بہت زیادہ خوبصورت ہیں  مگر میری ایک کزن ہے جو بہت ہی زیادہ خوبصورت ہے وہ مجھے پسند کرتی ہے یا نہیں یہ تو مجھے نہیں پتا مگر میں اسے بہت پسند کرتا ہوں. اور میں اسکے مزے بھی لینا چاہتا ہوں مگر وہ مجھ سے  سیدھی طرح بات ہی نہیں کرتی اسکی بڑی گانڈ بھی بہت  تھی

ایک دفع جب ہماری فیملی میں ایک شادی چل رہی تھی  زیادہ ترمہمان گھر پر ہی رکے ہوئے تھے میری کزن جسکا نام اروبا ہے وہ بھی اپنی فیملی کے ساتھ آئی ہوئی تھی میں موقع ڈھونڈ رہا تھا  کہ وہ مجھے اکیلے میں ملے تو میں اپنا کام کروںمگر میری اس سے زیادہ بات نہیں ہو پائی تھی شادی ختم ہوگئی تھی اور سارے مہمان جانے کی تیاریوں میں تھے

اروبا کی فیملی کی اگلے دن کی فلائٹ تھی رات کو میرے کزن نے مجھے آکر نیوز دی کہ تیری محبوبہ اوپر چھت پر ہے تو میں جلدی سے اوپر پہنچ گیا وہا پہنچ کر میں نے اس سے بات کی. اسے پرپوس کیا میں نے اسے بولا کہ میں تمہارے ساتھ سیکس کرنا چاہتا ہوں اور حیرت انگیز طور پر اس نے کچھ نہیں کہا. وہ بھی مجھے پسند کرتی تھی اور میرے ساتھ سیکس کرنے کو تیار تھی

میں نے کہا ٹھیک ہے میرے روم میں چلو میں اسکو روم میں لانے کہ بعد اسکو بیڈ پر بٹھایا پھر میں اور وہ  کسسنگ کرنے لگے مجھے لگا کہ اروبا شاید یہ سب پہلی بار نہیں کر رہی تھی.  مگر میرا پہلی بار تھا مجھے تو جو میرے دوستوں نے بتایا تھا میں تو وہی کر رہا تھا کسسنگ کے بعد میں نے اپنے کپڑے اتارے اور اروبا کو کپڑے اتارنے کا کہا اروبا نے بنا شرمائے کپڑے اتار دئیے تھے  وہ بھی سیکس چاہتی تھی لیکن لڑکی ہونے کی بنا پہ پہل نہیں کر پا رہی تھی

اسکا جسم دیکھ کر اوہوہوہوہ میرے تو ہوش ہواس اڑ گئے تھے پھر تو میں شروع ہوگیا تھا مجھے بہت مزہ  آرہا تھا میرے ساتھ ساتھ اروبا کو بھی بہت مزہ آرہا تھا سیکس کے دوران وہ مجھے خود کہہ رہی تھی کہ مجھے یہاں کس کرو یہاں بھی کرو اور اس نے مجھ سے اپنی پوری باڈی پر کس کروائی

وہ  خود بھی  مجھے میری پوری باڈی پر کس کر رہی تھی پھر اگلے دن جب سب لوگ چلے گئے میں  بہت اداس تھااور اس کی یاد مٰں اسی جگہ چھت پہ جا کے بیٹھ گیا دل نا لگا میں واپس اپنے روم  میں آیا اسکو فون کیا تو اس نے کہا کہ ہم آج کے بعد ہوٹل میں ملیں گے. اور وہی ہم جتنا چاہے سیکس کر سکتے ہیں

پر اسکے بعد ہمیں جب بھی لگا کہ ہمیں سیکس کی ضرورت ہے ہم ہوٹل میں مل کر اپنی اس خواہش کو پورا کر لیں گےایسا لڑکی کے ساتھ پاکستانی سکس کرنا ایک دم لش مزیدار اور خوار والا مزہ تھا میں ایسے سکس کی کرنے والی لڑکی کی جوانی کا فل مزہ لینے لگا ہوں اور ہر بار ایسی ہی لڑکی ڈھونڈ کر اسکا مزہ لیتا ہوں۔اور مجھے اسکی بڑی گانڈ بھی پسند ہے

لیکن چھ ماہ بعد وہی ہوا جو میرے ساتھ ہوتا ہے ا سکی کسی دوسری جگہ شادی ہو گئی اور ہم بھی اک نئے شہر جا بسے اور اب مجھے بی اے کے بعد نوکری مل چکی تھی. میں ایک فیکٹری میں کام کرتا تھا میرے ساتھ ایک دیسی آنٹی بھی کام کرتی تھی میں ان کو روز گھر چھوڑنے جاتا تھا ان سے میری بہت اچھی بات ہو گئی تھی

ایک دن انہوں نے مجھ کو اپنے گھر کے اندر بلا لیا میں جب اندر گیا تو انہو ں نے اپنی بیٹی کو بلایا اور مجھ سے ملایا اس نے مجھ کو سلام کیا پھروہ میرے لئے چاے لینے چلے گئی. کیا شاندار سیکسی بیٹی تھی اس کی دل کرے ماں بیٹی کو چود لوں میں آنٹی سے بات کررہا تھاوہ چاے لے آئی میں چاے پی کر گھر آ گیا

پھر میں آنٹی کو لینے جب گھر گیا تو پتا چلا کہ وہ چلے گئی ہے میں ان کی بیٹی کے ساتھ اندر چلا گیا  کیونکہ ا سنے مجھے اندر آنے کی دعوت دی تھی جوبہت خوبصورت تھی. مجھ کو اس سے پیار ہو گیا تھا میں نے اسکا فون نمبر لے لیا پھر میں فیکٹری چلا گیا اس سے میری بات بہت اچھی ہو گئی ہم رات بھر کال پر بات کرنے لگےپھرمیں نے اس کو ملنے بلا یا اور اس کو پرپوس کیا اور گلے لگا لیا

میں فیکٹری سے گھر جانے لگا تو آنٹی کسی اور کے ساتھ جا رہی تھی میں نے موقع کا فائدہ اٹھایا اور آنٹی کی بیٹی کے پاس چلا گیا کیونکہ وہ گھر اس وقت اکیلی تھی  جب میں گھر پہنچا تو گیٹ کھلا تھا میں اندر گیا تو وہ لڑکی نہا رہی تھی میں چھپ کردیکھ رہا تھا بڑے ممے تھے  بہت گورے تھے چوت تو پنک تھی میرا تو دل کر رہا تھا کے ابھی جا کرچود دو

میں اس کو باتھ روم کے دروازے کے کی ہول والی جگہ سے دیکھ رہا تھامیں اس کے گھر کے دوبارہ باہر آگیاجب وہ نہا کر باہرآئی تو میں باہر جا چکا تھاپھر میں نے اس سے کال پر چودائی کی بات کرنے لگا  ا سکے گھر کی نکڑ پہ ہی کھڑا ہو  کے بات کر رہا تھا

پھر میں نے اس کو چودنے کا کہا تووہ راضی ہو گئی آنٹی اس  نئے مرد کے ساتھ روز جانے لگی  شائد اس سے چدائی لگواتی تھی کسی اور جگہ جا کےمیں آنٹی کے گھر گیا .اس لڑکی کو جا کر اپنی بانہوں میں لے لیا پھر اس کے مموں  کو دبایا پھر اس کو پلنگ پر لٹایا اسکی قمیض اتاری

کافی دیر تک اس کے ممو کو چاٹتا رہا پھر اسکی شلوار اتاری اس کی چوت میں انگلی ڈالی اس کو بہت مزہ آنے لگا پھر میں نے اپنا لنڈ نکال کر اسکی چوت میں ڈالا تووہ چلاننے لگی میں نے لنڈ کافی دیر اسکی چوت میں ڈال کر رکھاوہ درد کی وجہ سے چیخ رہی تھی

پھر میں نے اس کو اپنے لنڈ پر بٹھایا اور زور زور سے جھٹکے مارے. اسکی چوت سے خون نکلنے لگا پھروہ رونے لگی اور بہت گھبرا گئی میں نے اسکو سمجھایا کہ کچھ نہیں ہوگا اور اسکی کی چوت سے خون صاف کیا پھر میں اسکے اوپر چڑھ گیا ممو ں کو دبا دبا کے اس کو چودتا رہا اور پھر اس نے میرے لنڈ کو منہ میں لے لیا

کافی دیر تک چوستی رہی پھر اسکو لٹا کر پورے جسم کو چاٹنے لگا کافی دیر اسکے ممو کو دبایا اور اسکی چوت میں انگلی کرنے لگا تھوڑی ہی دیر میں اسکی چوت سے پانی نکل گیا.وہ بلکل سیدھی لیٹ گی اور اسکے بعد تو جیسے ہم ایک دوسرے کے ساتھ بردست انداز میں مست خوار سکس کرنے لگے اور وہ دیسی آنٹی کی دیسی بیٹی کمال کی تھی  جس نے مجھے کزن اروبا کی چوت بھلا دی تھی

Pakistani Sex Stories mae bar bar us ki chudai lagai

 

What did you think of this story??

Comments

Scroll To Top